اردوئے معلیٰ

دلوں کو با خبر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

نگاہیں معتبر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

 

تڑپنا چھوڑ دو اے غم کے مارو ، بے سہارو سب

مقدّر باثمر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

 

کرم کی بدلیاں چھائی ہوئی ہیں آسمانوں پر

دُعائیں پُراثر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

 

ادا کرتے ہوئے شکرِ خدا سارے درودوں سے

زبانیں اپنی تر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

 

سبھی جبریل کی طرح لگا کر سبز جھنڈے بھی

سبھی روشن نگر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

 

بنیں گی بگڑیاں ساری حلیمہ سعدیہ دیکھو

سب اپنی جھولیاں بھر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

 

رضاؔ جی بٹ رہا ہے جامِ امرت مکے میں آؤ

پیو خود کو امر کر لو مرے آقا کی آمد ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات