اردوئے معلیٰ

Search

دیکھنے والی ہے اس وقت قلم کی صورت

چومتا جاتا ہے کاغذ کو حرم کی صورت

 

اس پہ تحریر ہوئی جاتی ہے آقا کی ثناء

بن رہی ہے مرے عصیاں پہ کرم کی صورت

 

آپ کا پیار سنبھالا جو نہ دیتا مجھ کو

اور ہی ہوتی مرے رنج و الم کی صورت

 

شہر تو شہر ہے شیدائی مرے آقا کے

"​دشت میں جائیں تو ہو دشت ارم کی صورت”​

 

مدح سرکار میں آنکھوں کا وضو لازم ہے

خود بخود بنتی ہے پھر نعت رقم کی صورت

 

ہر کوئی اپنی نگاہوں پہ بٹھاتا ہے مجھے

اور کیا ہوتی ہے الطاف و کرم کی صورت

 

آس سرکار کا دامان شفاعت ہو نصیب

تب ہی محشر میں بنے میرے بھرم کی صورت

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ