رحمتِ داور، سرورِ عالم صلی اللہ علیہ وسلم

رحمتِ داور، سرورِ عالم صلی اللہ علیہ وسلم

خلق کے یاور، خلقِ مجسم صلی اللہ علیہ وسلم

 

بحرِ ہدایت کانِ سخاوت، گنج سعادت، مہرِ رسالت

رہبرِ اعظم، مَرسَلِ خاتم صلی اللہ علیہ وسلم

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

کرم ہو یارب لحد میں اتنا، سوال ہو سامنے جو ان کے
جو عالم مدینے میں ہم دیکھتے ہیں
نہیں کوئی حبیبِ کبریاؐ سا
جب بھی ذکرِ رسولؐ ہوتا ہے
درِ خیر البشرؐ پیشِ نظر ہے
نبیؐ کا آستاں دار الاماں ہے
مری پرواز محبوبِ خُدا کے آستاں تک ہے
جسد کو جب تلک ہو اذن ان کے گھر بلاوے کا
’’عرش پہ تازہ چھیڑ چھاڑ فرش پہ طُرفہ دھوم دھام‘‘
’’ہے عام کرم اُن کا اپنے ہوں کہ ہوں اعدا‘‘