اردوئے معلیٰ

Search

سارے تمدّنوں کا وہی نقطۂ اساس

ساری سیاستوں کی کلیدیں اُسی کے پاس

سارے علوم ہیں اُسی اُمیّ سے اقتباس

ساری شعاعیں ہیں اُسی سورج کا انعکاس

تزئینِ رنگِ عالمِ ایجاد ہے وہی

تہذیب کے ستون کی بنیاد ہے وہی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ