سارے عالم میں کہیں کوئی نہیں

سارے عالم میں کہیں کوئی نہیں

آپ کے جیسا حسیں کوئی نہیں

 

انبیاء ہیں معتبر پر آپ سا

ضو فشاں ماہِ مُبیں کوئی نہیں

 

دو جہانوں میں سوائے آپ کے

رحمتہ اللعالمیں کوئی نہیں

 

ذِکر ہے قُرآن میں وَالَّیل کا

اِس قدر زُلفِ حسیں کوئی نہیں

 

بارہا جبریل نے بھی یہ کہا

آپ جیسا مَہ جبیں کوئی نہیں

 

کُنْ سے لے کر آج تک دیکھا گیا

آپ سا صادق، امیں کوئی نہیں

 

ہے جہانِ رنگ و بُو مَہکا ہوا

آپ جیسا عَنبریں کوئی نہیں

 

پائے اقدس آپ کے جس پر لگے

اُس زمیں سی سرزمیں کوئی نہیں

 

اے رضاؔ اُن کے سوا کونین میں

شاہکارِ دِل نشیں کوئی نہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

سوال : حُسن کی دنیا میں دیجیے تو مثال؟
محمدؐ کا حُسن و جمال اللہ اللہ
حُسن کی تشبیہ کے سب استعارے مسترد
جاری ہے فیض شہر شریعت کے بابؑ سے
آئے بیمار جو دَر پر تو شِفا دیتے ہیں
بے خُود کِیے دیتے ہیں اَندازِ حِجَابَانَہ​
مرحبا! رحمت دوامی پر سلام
تاجدار جہاں یا نبی محترم (درود و سلام)
دوستو! نور کے خزینے کا
جو ان کے ہونٹوں پہ آ گیا ہے ، وہ لفظ قرآن ہوگیا ہے