اردوئے معلیٰ

Search

سارے نبیوں کے عہدے بڑے ہیں لیکن آقا کا منصب جدا ہے

وہ امامِ صفِ انبیاؑء ہیں ان کا رتبہ بڑوں سے بڑا ہے

 

کوئی لفظوں سے کیسے بتا دے ان کے رتبے کی حد ہے تو کیا ہے

ہم نے اپنے بڑوں سے سنا ہے صرف اللہ ان سے بڑا ہے

 

وہ جو اک شہر نور الہدیٰ ہے جلوہ گاہوں کا اک سلسلہ ہے

جس کی ہر صبح شمس الضحیٰ ہے جس کی ہر شام بدر الدجیٰ ہے

 

نام جنت کا تم نے سنا ہے میں نے اس کا نظارا کیاہے

میں یہاں سے تمہیں کیا بتا دوں ان کی نگری کی گلیوں میں کیا ہے

 

کتنا پیارا ہے موسم وہاں کا کتنی پرکیف ساری فضا ہے

تم میرے ساتھ خود چل کے دیکھو گرد طیبہ بھی خاک شفا ہے

 

یہ وہی شہرِ طیبہ ہے جس میں خواب گاہِ حبیبِ خدا ہے

کام ہے جن کا عقدہ کشائی، نام بھی جن کا خیر الورٰی ہے

 

جن کا رتبہ سوا ہے خرد سے، فہم و ادراک سے ماورا ہے

بحر و بر جن کے زیرِ نگیں ہیں، تابہ افلاک جن کی ضیا ہے

 

پیشواؤں کے جو پیشوا ہیں، اک لقب جن کا صدرالعلٰی ہے

قاب قوسین ہے جن کی منزل، رہگزر سدرۃ المنتہٰی ہے

 

مستقل ان کی دیوڑھی عطا ہو، میرے معبود یہ التجا ہے

کوئی پوچھے تو یہ کہ سکوں میں، باب جبریل میرا پتہ ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ