اردوئے معلیٰ

Search

سجا ہوا ہے لبوں پر درود بسم اللہ

مدام ہے یہی کارِ سعود بسم اللہ

 

زباں پہ لاتی ہیں جب بھی صدا کو دو مِیمیں

تو ہونٹ بنتے ہیں تارِ سرود بسم اللہ

 

سلامتی ہے سراسر مرے حضور کا دِین

بصد نیاز، حدود و قیود بسم اللہ

 

کلی سے پھول ہُوا عشق اور مہک جاگی

ادائے رنگ میں بست و کشود بسم اللہ

 

کلیدِ نعت نگاری پہ میرے لفظ نثار

سخن پہ کھُلتا ہے بابِ جمود بسم اللہ

 

فلک سے آتی ہے چل کر شعاعِ نور میاں

جب ان کی کرتا ہے مدحت، وجود، بسم اللہ

 

لبِ یقین پہ آتا ہے اسمِ شاہِ امم

سکوں کی ہوتی ہے دل میں نمود بسم اللہ

 

کمالِ عظمتِ سیرت پہ لاکھ بار سلام

جمالِ شہ پہ فدا ہست و بود بسم اللہ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ