اردوئے معلیٰ

سوچتا ہوں جانے کیوں؟

بے قرار موسم میں

کچھ اداس لمحوں میں

زندگی کے ہاتھوں میں

بے خودی کے گھیرے میں

ہر گلی کی نکّر پر

ہر ندی کنارے پر

میری آنکھ سے بہتے

آنسوؤں کے دھارے پر

تیرے ساتھ رہنے کا

شہر بھر کے چہروں کی

سب حسین آنکھوں میں

جھانک کر تری خاطر

تجھ کو تکتے رہنے کا

خوشبوؤں کے دامن میں

ہر کلی کی آہٹ پر

تجھ سے بات کرنے کا

ان اداس سڑکوں پر

رات کے اندھیروں میں

صرف تیرے بارے میں

سوچتے ہی رہنے کا

سوچتا ہوں جانے کیوں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات