اردوئے معلیٰ

Search

 

شاہِ بطحا کا جس پر کرم ہوگیا

دونوں عالم میں وہ محترم ہوگیا

 

آگئی ان کے اَخلاق کی روشنی

دور دنیا سے جور و ستم ہوگیا

 

ذکرِ میلادِ سرکار سے خود بخود

شورِ باطل زمانے میں کم ہوگیا

 

مرحبا سفرِ معراج کی حکمتیں

عرشِ حق ان کے زیرِ قدم ہوگیا

 

بن گیا راحتِ جاں وہ سب کیلئے

نعت میں لفظ جو بھی رقم ہوگیا

 

آگیا میرے لب پر جو نامِ نبی

دور ہر ایک رنج و الم ہوگیا

 

عظمتیں اس کی کوئی بتائے گا کیا

وقفِ نعتِ نبی جو قلم ہوگیا

 

سرورِ دوجہاں کے قدم چوم کر

بیتِ حق اور بھی محترم ہوگیا

 

کُھل گیا اس کی خاطر درِ خلدِ حق

ان کے در پر ادب سے جو خم ہوگیا

 

اُن کی نسبت کے صدقے میں فیض ا لامیں

مجھ پہ آسان سفرِ عدم ہوگیا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ