شہِ دیں کی نعتیں سنانا مبارک

شہِ دیں کی نعتیں سنانا مبارک

مقدر ترا مسکرانا مبارک

 

مبارک مجھے گردِ راہِ مدینہ

تمہیں خلعتِ خسروانہ مبارک

 

جو گزرے ثنائے شفیع الوریٰ میں

وہ ساعت مبارک ، زمانہ مبارک

 

ہوں مصروف نعتوں کی بست و بنت میں

ہے کتنا مرا تانا بانا مبارک

 

ہے جس کے لبوں پر درودوں کا نغمہ

اسے رحمتِ جاودانہ مبارک

 

ہے سینہ ترا مخزن عشق آقا

تجھے یہ شرف یہ خزانہ مبارک

 

رہائش ملی جس کو شہرِ نبی میں

اسے خلد سا آشیانہ مبارک

 

مبارک تمہیں اہل عالم ! یہ عالم

مجھے طرئہ خادمانہ مبادک

 

شہِ دو جہاں کے دیار کرم میں

مرے دل ! ترا آنا جانا مبارک

 

ہے شاخِ عطا بارور ان کے صدقے

ہے میرے نبی کا گھرانا مبارک

 

فراقِ مدینہ میں اے نورؔ تیرا

شب و روز آنسو بہانا مبارک

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ