اردوئے معلیٰ

Search

 

صبح آتا ہوں یہاں اور شام ہو جانے کے بعد

لوٹ جاتا ہوں میں گھر ناکام ہو جانے کے بعد

 

ڈھانپ دیتے ہیں ہوس کو عشق کی پوشاک میں

لوگ سارے شہر میں بدنام ہو جانے کے بعد

 

اک ہجومِ یاد ہوگا اِن گلی کوچوں کے بیچ

دیکھ شہرِ دل کی رونق شام ہو جانے کے بعد

 

یاد کرنے کے سوا اب کر بھی کیا سکتے ہیں ہم

بھول جانے میں تجھے ناکام ہو جانے کے بعد

 

خود جسے محنت مشقت سے بناتا ہوں جمال

چھوڑ دیتا ہوں وہ رستہ عام ہو جانے کے بعد

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ