اردوئے معلیٰ

Search
مرے آقا ! میں حاضر ہو گیا ہوں
آپ کے در پر!
طلب ہے مغفرت کی
معترف میں جرم کا بھی ہوں
مرے آقا ! شفاعت میری فرمائیں!
مرے اللہ  نے قرآن میں نسخہ بتایا ہے
کہ جب بھی (اہلِ ایماں)
اپنی جانوں پر کبھی کچھ ظلم کر بیٹھیں
تو آجائیں نبی کے پاس
رَبّ سے مغفرت چاہیں
رسول اللہ بھی ان کے لیے پھر
اپنے رَبّ سے مغفرت چاہیںتو ایسے لوگ پائیں گے
بہت ہی مہرباں رَبّ کو
وہ رَبّ کو (بالیقیں ہر حال میں)
توَّ اب پائیں گے!
نبیِ محترم !
میں آپ کے قدموں میں حاضر ہوں
مری اِک التجا ہے
آپ کی چشمِ عنایت
میری جانب ہو
تو بیڑا پار ہو جائے!!!
نوٹ : سورۂ نساء کی آیت نمبر ۶۴ کی روشنی میں لکھی گئی۔
(اور اگر یہ لوگ جب انہوں نے اپنی جانوں پر ظلم کیا تھا،
تیرے پاس آ جاتے اور اللہ تعالیٰ سے استغفار کرتے اور رسول بھی
ان کے لیے استغفار کرتے تو یقینا یہ لوگ اللہ تعالیٰ کو معاف کرنے والا
مہربان پاتے)۔مسجد نبوی۔ ۹ ذیقعدہ ۱۴۲۶ھ۔ اتوار ۱۱؍ دسمبر ۲۰۰۵ء
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ