اردوئے معلیٰ

عجز ، مدحت ، ولا ، دُعا سب کچھ

عجز ، مدحت ، ولا ، دُعا سب کچھ

اُن کی چوکھٹ سے ہی ملا سب کچھ

 

اُن کے کہنے سے بن گئی ہر بات

اُن کی مرضی سے ہو گیا سب کچھ

 

اُس کرم خُو کی خُوئے خیر میں ہے

ماسوا ایک حرفِ ’’ لا ‘‘ سب کچھ

 

وہ ہی کرتے ہیں چارہ سازئ دل

جا اُنہیں کو بتا دلا ! سب کچھ

 

اُن سے آباد ہو گئے منظر

ورنہ ہر سمت تھا خلا ، سب کچھ

 

اُن کے ہاتھوں سے ہو رہا ہے عطا

دے رہا ہے ہمیں خُدا سب کچھ

 

مرحلے وقت کے اُنہیں سے ہیں

ابتدا ، وسط ، انتہا ، سب کچھ

 

جو لبِ عرض تک نہیں آیا

آپ نے وہ بھی دے دیا سب کچھ

 

آپ کے شہرِ بندہ پروَر میں

بٹتا رہتا ہے جا بہ جا سب کچھ

 

اوجِ جاؤک کے خیار نشین

یہ ہے میرا کِیا دھرا سب کچھ

 

ہم کو کرتے ہیں وہ عطا مقصودؔ

حسرتوں سے بھی ماورا سب کچھ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ