عیاں ہے سب میں کہاں ہے مخفی کب اس کا جلوہ نقاب میں ہے

عیاں ہے سب میں کہاں ہے مخفی کب اس کا جلوہ نقاب میں ہے

قصور اپنی نگاہ کا ہے وگرنہ کب وہ حجاب میں ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ