اردوئے معلیٰ

عیدِ میلاد ہے آج کونین میں ، ہر طرف ہے خوشی عیدِ میلاد کی

سب کہو آمدِ مصطفٰی مرحبا ، ہے سہانی گھڑی عیدِ میلاد کی

 

یہ فرشتوں کے لشکر ، یہ نوری سماں ، جشنِ میلاد پر خوش ہے سارا جہاں

نور ہی نور ہے آج چھایا ہوا ، ہے ہمیں بھی خوشی عیدِ میلاد کی

 

مصطفی آ گئے ، مجتبٰی آ گئے، ساری مخلوق کے رہنما آ گئے

ان کے آنے سے ہم کو ہدایت ملی، ہے یہ برکت سبھی عیدِ میلاد کی

 

آج آتش کدے سب کے سب بجھ گئے، مٹ گئیں کفر کی ساری تاریکیاں

آج ظلمت کدے بھی ہیں روشن ہوئے، ہے فقط روشنی عیدِمیلاد کی

 

کچھ نہ تھا جب ہوئی خلقت مصطفی تھے یہ شمس و قمر نہ ہی ارض و سما

سب جہاں ہیں بنے ان کے ہی نور سے، سب سے نعمت بڑی عیدِ میلاد کی

 

ماہِ طیبہ جو چمکا اجالا ہوا، سب جہاں روشنی سے نرالا ہوا

یہ معطر سماں ، یہ منور جہاں، ہے یہ سب چاندنی عیدِ میلاد کی

 

جن کے آنے سے ہم کو ہیں عیدیں ملی، جن کے ہی دم قدم سے بہاریں ملی

ان پہ قرباں ضیائی تری زندگی ، ہم کو دولت ملی عید ِ میلاد کی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات