اردوئے معلیٰ

غم ہے نا کوئی دکھ ہے نہ پہلو میں درد ہے

روئے سخن پہ جب سے مدینے کی گرد ہے

 

زیرِ قدم ہیں انجم و خورشید و ماہتاب

خوش بخت کتنا طیبہ کاصحرا نورد ہے

 

ہے گنبدِ خیال میں چہرہ حضور کا

آتش فراق و ہجر کی سینے میں سرد ہے

 

اپنی مثال آپ ہے وصف و کمال میں

ہر فرد خاندانِ نبوت کا فرد ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات