اردوئے معلیٰ

قریہ قریہ نعت مسلسل پھیلے گی

مدحت کی سوغات مسلسل پھیلے گی

 

باطل جس پیغام سے خائف ہوتا ہے

اس کی ہر اک بات مسلسل پھیلے گی

 

آقا کی سیرت کو جب اپناؤ گے

رحمت کی برسات مسلسل پھیلے گی

 

جب تک دین سے دور رہے گی یہ اُمت

گمراہی کی رات مسلسل پھیلے گی

 

شیطانوں کی راہ چلیں گے جب تک ہم

بے شرمی، بد ذات، مسلسل پھیلے گی

 

دین کو مضبوطی سے تھامو! تم احسنؔ

دیں چھوڑا تو مات مسلسل پھیلے گی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات