قصہ ء خوب اور خراب پہ داد

قصہء خوب اور خراب پہ داد

ممتحن ! عشق کے نصاب پہ داد

 

پھر وہی اک سوال قربت کا

پھر ترے جھوٹ کے جواب پہ داد

 

اس برے وقت میں بھلا سا لگا

جاگتی چشمِ نم کے خواب پہ داد

 

عشق ہے اور بے حساب بھی ہے ؟

یار ، اس لفظ بے حساب پہ داد

 

آپ کا انتخاب کومل ہے ؟

آپ کے حسنِ انتخاب پہ داد

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ