اردوئے معلیٰ

Search

لب کو ذکرِ حضور ملتا ہے

چشم و دل کو سرور ملتا ہے

 

کملی والے کی نوری کملی سے

سب کو سایہ ضرور ملتا ہے

 

جس کو ملٍتا ہے دامنِ احمد

اس کو ربِ غفور ملتا ہے

 

کہہ رہے ہیں فرشتے آقا سے

چاند تاروں کو نور ملتا ہے

 

اے فداؔ سیرتِ نبی سے ہمیں

زندگی کا شعور ملتا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ