اردوئے معلیٰ

Search

 

لکھوں مدح پاک میں آپ کی مری کیا مجال مرے نبی

نہ مزاجِ حرف کی آگہی نہ ہوں خوش مقال مرے نبی

 

مجھے اپنے رنگ میں رنگ دیں مرے دل کو اپنی اُمنگ دیں

ہو عطا وہ لذتِ سوزِ جاں جو ہو لازوال مرے نبی

 

میں نواحِ شب میں بھٹک گیا نئے سُورجوں کی تلاش میں

کوئی روشنی کہ بدل سکے مری شب کا حال مرے نبی

 

کہیں نفرتیں کہیں رنجشیں کہیں خاک و خون کی بارشیں

مرے عہد میں ہے عجیب رنگ کا اشتعال مرے نبی

 

مری زندگی کی کتاب میں سبھی حرف نعت کے حرف ہوں

اسی ذکر و فکر میں ہوں بسر مرے ماہ و سال مرے نبی

 

جہاں شاخِ نعت لہکتی ہے جہاں کائنات مہکتی ہے

کوئی نعت ہو اسی شہر میں ہے یہی سوال مرے نبی

 

لکھے حرفِ زندہ بھی نعت میں ہے صبیحؔ کی یہی آرزو

کوئی ایسی طرزِ سخن ملے پئے عرضِ حال مرے نبی

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ