ماتمِ شبیرؑ کا د ل پر اثر پیدا ہوا

ماتمِ شبیرؑ کا د ل پر اثر پیدا ہوا

اے سلامی نخلِ ماتم میں ثمر پیدا ہوا

 

جب علیؑ سا بازوئے خیر البشر پیدا ہوا

اے سلامی دشمنوں کے دل میں ڈر پیدا ہوا

 

جب کہ آئی شمر کی صورت سکینہؑ کو نظر

دیکھتے ہی دل میں اس بچی کے ڈر پیدا ہوا

 

یارو سینچو اشک سے نخلِ غمِ شبیرؑ کو

روزِ محشر دیکھ لینا کیا ثمر پیدا ہوا

 

مثلِ طاعت فرض ہے سب پر غمِ سبط نبی

کیونکہ اس ماتم میں رونے کو بشر پیدا ہوا

 

جب لکھا میں نے سلام الفت گلستاں بن گیا

برگِ لفظ اور بارِ معنی سے شجر پیدا ہوا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ