اردوئے معلیٰ

مجھ پہ بھی چشمِ کرم ماہِ رسالت کرنا

مجھ پہ بھی چشمِ کرم ماہِ رسالت کرنا

التجا ہے یہ مری اتنی عنایت کرنا

 

کاش! میرے بھی مقدر میں یہی لکھا ہو

رات دن آپ کے روضے کی زیار ت کرنا

 

مجھ کو خوش بخت اسی واسطے سب کہتے ہیں

کہ مرا عشق ہے سرکار کی مدحت کرنا

 

ہیں گنہ گارو خطا کار مگر آ پ کے ہیں

ہم سیہ کاروں کی محشر میں شفاعت کرنا

 

کام آئے گا یہی دونوں جہاں میں آصف

آپ کے اسوۂ کامل کی اطاعت کرنا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ