اردوئے معلیٰ

Search

مجھ کو بھی بلا لیجے سرکار مدینے میں

دیدار سے ہو جاؤں سرشار مدینے میں

 

ادنیٰ سا اشارا بھی ہوجائے اگر آقا

لے کر میں پہنچ جاؤں گھر بار مدینے میں

 

کیونکر نہ مثالی ہو ہر چیز مدینے کی

ہے خالق عالم کا شہکار مدینے میں

 

کچھ عقل و خرد پر ہی موقوف نہیں لوگو !

دیکھا ہے جنوں کو بھی ہشیار مدینے میں

 

ہونٹوں کو ہلانے کی حاجت نہیں اس در پر

اشکوں کی زبانی ہو اظہار مدینے میں

 

تا حشر تقرب کا اعزاز عطا کیجے

میرا بھی بنے مدفن سرکار مدینے میں

 

چاہیں تو عطا کر دیں منگتا کو شہنشاہی

ہیں نورؔ دو عالم کے مختار مدینے میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ