محبوبِ ربِّ انس و جاں میرے حضورؐ ہیں

محبوبِ ربِّ انس و جاں میرے حضورؐ ہیں

محبوبِ جملہ مرسلاں میرے حضورؐ ہیں

 

میرے حضورؐ قافلہ سالارِ عارفاں

جانِ جہانِ عاشقاں میرے حضورؐ ہیں

 

میرے حضورؐ مرکزِ اُمیدِ سالکاں

مرکز نگاہِ مقبلاں میرے حضورؐ ہیں

 

میرے حضورؐ مونس و غم خوارِ بے کساں

چارا گرِ بے چارگاں میرے حضورؐ ہیں

 

میرے حضورؐ باعثِ تخلیقِ کائنات

آفاق کے روحِ رواں میرے حضورؐ ہیں

 

میرے حضورؐ حاملِ قرآں ہیں بالیقیں

ربّ العلیٰ کے ترجماں میرے حضورؐ ہیں

 

احقر ظفرؔ ہے آپؐ کا بندہ مرے حضورؐ

بندہ نواز و مہرباں میرے حضورؐ ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

نبی کے آستاں سے ربّ ملا ہے
درودوں کا وظیفہ لمحہ لمحہ دم بدم رکھیں
حضور آپ کا اسوہ جہانِ رحمت ہے
جس کو آیا قرینہ مدحت کا
صبحِ بزمِ نو میں ہے یا شامِ تنہائی میں ہے
کیا عجب لطف و عنایات کا در کھُلتا ہے
طُرفہ انداز لیے اُن کے کرم کی صورت
کچھ اور ہو گا رنگِ طلب ، جالیوں کے پاس
شاہ بطحا کی اگر چشم عنایت ہوگی
ہر جگہ اہل ایمان غالب رہے

اشتہارات