اردوئے معلیٰ

Search

مٹی سے پیار کر تو نکھر آئے گی زمین

دامن میں بھر کے اپنے ثمر آئے گی زمین

 

نیچے اتر خلاؤں سے لوگوں کے دکھ سمیٹ

شمس و قمرسے بڑھ کے نظر آئے گی زمین

 

کشتی کے آسرے کو ڈبو کر تو دیکھ تُو

پانی کے درمیان اُبھر آئے گی زمین

 

بٹ جائیں گی محبتیں لوگوں کیساتھ ساتھ

روٹی کے مسئلے میں اگر آئے گی زمین

 

طوفان بُن رہے ہیں جدھر بجلیوں کے جال

کہتا ہے ناخدا کہ اُدھر آئے گی زمین

 

رشک قمر بنے گی یہ اک روز دیکھنا

جب اپنی گردشوں سے گذر آئے گی زمین

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ