میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

حسن و جمال وہ ہے کہ بس دیکھتا رہے

رعب و جلال وہ ہے کہ دیکھا نہ جا سکے

سیرت وہ مرحبا ہے کہ قرآن ہی لگے

اوصاف اس قدر کہ ہیں دفتر بھرے پڑے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

شمعِ ہدیٰ ہے چاروں طرف اس کی ہے ضیا

وہ جلوہ گاہِ عرشِ بریں تک بھی ہے رسا

سرتاجِ مرسلیں ہے وہ سرخیلِ انبیا

وہ مقتدا نماز میں سب مقتدی بنے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

ہے ماہتاب اس کو ستاروں کی کیا کمی

صدیقؓ ہے عمرؓ ہے وہ عثماںؓ ہے یہ علیؓ

لاریب ایک ایک ہے جاں دادۂ نبیؐ

دیکھیں نہ اک نظر تو ہزار آئیں وسوسے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

مردِ جری ہے اس کی فتوت ہے بے مثال

ٹھہریں نہ اس کے سامنے کفارِ بد مآل

بھاگیں شکست خوردہ وہ از عرصۂ قتال

سب سر کئے ہیں اس نے جو پیش آئے معرکے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

تبلیغِ دینِ حق میں نہ چھوڑی کوئی کسر

ہونا پڑا ہے خون میں بھی اس کو تر بہ تر

لکھوا گئے کتابِ خدا کی وہ سطر سطر

دنیا و دین دونوں ہی محفوظ کر گئے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

نازل ہوئی ہے اس پہ جو اللہ کی کتاب

جس رخ سے دیکھئے اسے اس رخ سے لاجواب

حکمت کے موتیوں سے بھری ہے علی الحساب

جو اس میں معتکف رہے موتی وہی چنے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

چالیسویں برس میں نبوت خدا نے دی

تیئیس ہی برس میں یہ دنیا بدل گئی

واللہ معجزہ یہ کہ دنیا ہے حیرتی

ترسٹھ برس میں راہی ملکِ بقا ہوئے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

وہ جلوہ گاہِ ناز کہ پہنچیں جہاں سبھی

ہم بھی خوشا نصیب گئے تھے وہاں کبھی

محظوظ اس کی یاد سے دل ہے نظرؔ ابھی

پھر ایک بار جائیں مدینہ خدا کرے

 

میرا نبی وہ ہے کہ محمدؐ کہیں جسے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

ہر لفظ کہہ رہا ہے مقدّس کتاب کا
وہ کون سی منزل تھی کل رات جہاں میں تھا
دِوانو! جشن مناؤنبی کی آمد ہے
محمد مصطفیٰؐ کا میرے لب پر جب بھی نام آیا​
جو نگاہِ شہِ امم ہو جائے
مدینہ چھوٹتا ہے جب تو کیسا درد ہوتا ہے
عطا کا مال و زر دامن میں بھرکر ناز کرتا ہے
جمالِ دو عالم تری ذاتِ عالی​
گلزار مدینہ سے جسے پیار نہیں ہے
آنکھ کو منظر بنا اور خواب کو تعبیر کر