اردوئے معلیٰ

Search

 

کُن کی اَذانِ ناز کا جوہر نبی مرا

خلقت کی ہر بہار کا جھومر نبی مرا

 

رَوشن ہے کہکشاؤں میں حُسنِ محمدی

سوچو تو کس قَدَر ہے منور نبی مرا

 

رَحمت کرے طواف ، محمد کے نور کا

اَبرِ کرم کا شبنمی محور نبی مرا

 

پتھر پہ اِک لکیر ہے شقُ القمر کا باب

کنکر کو جو بنا دے سُخن وَر نبی مرا

 

سید ، کلیم ، اُمی ، محمد ، قوی ، خلیل

منصور ، حق ، نذیر ، مطہر نبی مرا

 

طٰہ ، بشیر ، عزیز ، رَحیم ، اَبطحی ، منیر

یٰس ، نور ، اَمین ، مدثر نبی مرا

 

نقشِ قدم رَسول کا خوشبوئے دین ہے

نعلین بھی ہے جس کی معطر نبی مرا

 

اَپنی طرف ترازُو کا جھکنا مُحال تھا

مولا کا شکر ، شافعِ محشر نبی مرا

 

تا حشر ، نعت خوانوں نے محنت تو کی مگر

قطرہ ہُوا بیان ، سمندر نبی مرا

 

معراج تھی فرشتوں کی حیرانگی کی رات

بے پر بھی اُترا قیس ، فلک پر نبی مرا​

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ