’’گرفتارِ بلا حاضر ہوئے ہیں ٹوٹے دل لے کر‘‘

 

’’ گرفتارِ بلا حاضر ہوئے ہیں ٹوٹے دل لے کر ‘‘

کرم فرمائیے شاہِ مدینہ ہم گداؤں پر

مداوائے غمِ دوراں شہِ خیر الورا تم ہو

’’ کہ ہر بے کل کی کل ٹوٹے دلوں کا آسرا تم ہو ‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ