اردوئے معلیٰ

 

یارب میری سوئی ہوئی تقدیر جگا دے

آنکھیں مجھے دی ہیں تو مدینہ بھی دکھا دے

 

سننے کی جو قوت مجھے بخشی ہے خداوند

پھر مسجدِ نبوی کی اذانیں بھی سنا دے

 

حوروں کی نہ غلماں کی نہ جنت کی طلب ہے

مدفن مرا سرکار کی بستی میں بنا دے

 

منہ حشر میں مجھ کو نہ چھپانا پڑے یا رب

مجھ کو تیرے محبوب کی کملی میں چھپا دے

 

مدُت سے میں ان ہاتھوں سے کرتا ہوں دعائیں

انِ ہاتھوں میں اب جالی سنہری وہ تھما دے

 

عشرت کو بھی اب خوشبوئے حسان عطا کر

جو لفظ کہے وہ اسے تو نعت بنا دے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات