اردوئے معلیٰ

یوں لگی مجھ کو خنک تاب سحر کی تنویر

یوں لگی مجھ کو خنک تاب سحر کی تنویر

جیسے جبریل نے میرے لئے پر کھولے ہیں

ہے ردا پوشی مری دنیا دکھاوے کے لئے

ورنہ خلوت میں بدلنے کو کئی چولے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ