اردوئے معلیٰ

اتنا بڑھا بشر، کہ ستارے ہیں گردِ راہ

اتنا بڑھا بشر، کہ ستارے ہیں گردِ راہ

اتنا گھٹا، کہ خاک پہ سایہ سا رہ گیا

ہنگامہ ہائے کارگہِ روز و شب نہ پوچھ

اتنا ہجوم تھا ، کہ میں تنہا سا رہ گیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ