ای میل E-mail

آج جب بکس(Box) کھولا
تو کافی دنوں بعد
ای میل تھی اُس کی
میسج تھا یہ اُس کا
’’مجبور ہوں میں
مِری انگلیاں اب کبھی
کرسکیں گی نہ ٹائپ
ترا ایڈرِس(Adress)
مرتضیٰ ایٹ دا ریٹ
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

میں جانتی تھی تعلق کی آخری شب ہے
تخلیق کا وجود جہاں تک نظر میں ہے
سُن لیا چشمِ تر کی نمی کے سبب
خسارہ بھی اگر ہو منفعت کہنا
آکسیجن Oxygen
اسکاٹ لینڈ
چلو اداسی کے پار جائیں
بحضورِ ماجد
زنانِ مصر
سالِ نو