اردوئے معلیٰ

Search

حضور کوئی تدارک کہ دل نُمو پائیں

ہم ایک گوشۂ سرسبز چار سُو پائیں

 

کمال ہو کہ سحر دَم جُونہی چراغ بُجھے

تو خود کو روضۂ اقدس کے رُو بہ رُو پائیں

 

کٹے تو صرف کٹے آپ کے لئے گردن

ہم اپنے دل میں شہادت کی آرزُو پائیں

 

ترے ہی فیض سے سَر کر لیں کوہِ ہست و بود

جہاں بھی جائیں وہاں خود کو سُرخ رُو پائیں

 

ہمارا رشتہ جُڑا ہو چراغِ نور کے ساتھ

ہم اپنی روح میں تخلیقی جستجُو پائیں

 

یہ ایک دُھن ہمیں رقصاں کئے ہوئے ہے کہ بس

ترا ہی جام ملے تیرا ہی سُبو پائیں

 

دُوبارہ جی اُٹھیں تاثیرِ اسمِ احمد سے

ہم اپنی مُردہ رگوں میں نیا لہُو پائیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ