دیکھیے اہل محبت ہمیں کیا دیتے ہیں

دیکھیے اہل محبت ہمیں کیا دیتے ہیں

کوچۂ یار میں ہم کب سے صدا دیتے ہیں

روز خوشبو تری لاتے ہیں صبا کے جھونکے

اہل گلشن مری وحشت کو ہوا دیتے ہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

جب نبی آنے نہیں تو یہ فرشتے بھی نہ بھیج
بسلسلۂ مرگِ زوجۂ دوم
مکیں سارے خدا کے حمد گو ہیں، مکاں سارے خدا کے حمد گو ہیں
خدائے پاک کا مجھ پر کرم ہے
مسلمانوں کا مرکز گھر خدا کا
زمانہ جس کو خالق مانتا ہے
سدا وردِ زباں اللہ اکبر
حضورِ کبریا بیٹھے ہوئے ہیں
خدا کو جب بھی طوفاں میں پُکارا
خدا کی قدرتیں ہر سُو عیاں ہیں