اردوئے معلیٰ

Search

راہِ طیبہ پہ قدم ایسے اُٹھاتا ہوا میں

قافلے والوں کو بھی نعت سناتا ہوا میں

 

آپ کی یاد میں اب شام و سحر کٹتے ہیں

نعت کے پھول قرینے سے سجاتا ہوا میں

 

سننے والوں کے بھی ایمان کو تازہ کر دوں

واقعے آپ کی سیرت کے سناتا ہوا میں

 

ہر گھڑی وردِ زباں اسمِ نبی رہتا ہے

دل کی تسکین کو کچھ اور بڑھاتا ہوا میں

 

رفتہ رفتہ میں مدینہ ہوا جاتا ہوں فدا

گنبدِ سبز کی تصویر بناتا ہوا میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ