سرِافلاک تھی سرکارؐ کی جب آمد آمد

سرِافلاک تھی سرکارؐ کی جب آمد آمد

زمانے سرنگوں تھے اور گزرتا وقت جامد

ثناؤں کی درُودوں کی دما دم گونج ہر سُو

وہاں جلوہ نما تھے با خُدا محمودؐ حامدؐ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

فرعون سے بدتر ہے وہ جل جائے الہی
وہ دانائے سبل ، ختم الرسل ، مولائے کل جس نے
سینے میں اُنؐ کی تنویر
جب بھی ہم اُنؐ کا ذکر کرتے ہیں
شاہ بطحا مجھے نظر دے دیں
مری سرکارؐ ہیں دل کش دل آراء
کروں ذکر اُنؐ کی عظمت کا، مری اوقات ہی کیا ہے
میں حمد و نعت کے اشعار با صدق و صفا لکھوں
’’اتنی رحمت رضاؔ پہ کر لو‘‘
’’با عطا تم، شاہ تم، مختار تم‘‘