اردوئے معلیٰ

لطف سے پیرِ مغاں دے پھر کوئی ساغر مجھے

لطف سے پیرِ مغاں دے پھر کوئی ساغر مجھے

مست کر دے تا خیالِ ساقیٔ کوثر مجھے

 

روضۂ حضرت کا شوقِ دید ہمدم کچھ نہ پوچھ

اُڑ کے میں فوراََ پہنچ جاتا جو ملتے پر مجھے

 

بے نیازِ فرشِ محمل ہوں ، گدائے شاہ ہوں

خاکِ یثرب کا فقط درکار ہے بستر مجھے

 

فوقؔ اندیشہ نہیں روزِ قیامت آ تو لے

بخشوا لیں گے خدا سے شافعِ محشر مجھے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ