اردوئے معلیٰ

میرے درد و غم کی دوا ہو رہی ہے

محمد کی محفل عطا ہو رہی ہے

 

شہنشاہِ ارض و سما آ رہے ہیں

خدا کی خدائی فدا ہو رہی ہے

 

انہیں مشکلوں میں بنا کر وسیلہ

بلاوں سے خلقت رِہا ہو رہی ہے

 

وہ در چوم کے شاید آئی ہے عارف

معطر جو بادِ صبا ہو رہی ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔