اردوئے معلیٰ

Search
بچھڑے ہوئے لمحوں کو
آواز نہیں دیتے
اُجڑے ہوئے نغموں کو
پھر ساز نہیں دیتے
جو غم سے بکھر جائیں
چُن لیتے ہیں وہ موتی
ہر جان سے پیارے کو
ہر راز نہیں دیتے
تم سے جو محبت ہے
پھر تم سے گلہ کیسا
بس اتنی شکایت ہے
جب دور نکل جاؤ
آواز نہیں دیتے
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ