نبیؐ اللہ کا مُجھ پر کرم ہے

نبیؐ اللہ کا مُجھ پر کرم ہے

نبیؐ دمساز میرا، دم بدم ہے

 

مرے سرکارؐ مُجھ پر مہرباں ہیں

مجھے تشویش ہے کوئی نہ غم ہے

 

امام الانبیا، محبوبِ یزداںؐ

عجب رُتبہ، عجب جاہ و حشم ہے

 

نہیں آنسو وہ برساتی ہے موتی

نبیؐ کی یاد میں جو آنکھ نم ہے

 

خُدا کا نام، اسمِ مصطفیؐ بھی

مرے سینے، مرے دِل میں رقم ہے

 

سگِ در ہوں درِ خیر البشرؐ کا

مرا سرکارؐ نے رکھا بھرم ہے

 

مری سرکارؐ کی وہ نعت لکھے

ظفرؔ! جو دیدہ ور، صاحب قلم ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

دو جگ کے مہاراج ، رسولوں کے ہو سرتاج
محمدؐ کا حُسن و جمال اللہ اللہ
سنا، دیارِ کا سارا حال مجھے
جاری ہے فیض شہر شریعت کے بابؑ سے
اذاں میں مصطفیٰ کا نام جب ارشاد ہو وے ہے
بے خُود کِیے دیتے ہیں اَندازِ حِجَابَانَہ​
کہتا ہوں جب بھی نعت مدینے کے شاہ کی
تاجدار جہاں یا نبی محترم (درود و سلام)
واہ کیا مرتبہ اے غوث ہے بالا تیرا
جو ان کے ہونٹوں پہ آ گیا ہے ، وہ لفظ قرآن ہوگیا ہے