اردوئے معلیٰ

Search

نبی کا نام جب میرے لبوں پر رقص کرتا ہے

لہو بھی میری شریانوں کے اندر رقص کرتا ہے

 

میری بے چین آنکھوں میں وہ جب تشریف لاتے ہیں

تصور ان کے دامن سے لپٹ کر رقص کرتا ہے

 

وہ صحراؤں میں بھی پانی پلا دیتے ہیں پیاسوں کو

کہ ان کی انگلیوں میں بھی سمندر رقص کرتا ہے

 

پڑے ہیں نقشِ پائے مصطفٰے کے ہار گردن میں

جبھی تو روح لہراتی ہے پیکر رقص کرتا ہے

 

خیال آتا ہے جب بھی گرمیِ روزِ قیامت کا

غمِ عصیاں سرِ دریائے کوثر رقص کرتا ہے

 

زمین و آسماں بھی اپنے قابو میں نہیں رہتے

تڑپ کر جب محمد() کا قلندر رقص کرتا ہے

 

لگی ہے بھیڑ اُس کے گرد یہ کیسی فرشتوں کی

یہ کس کا نام لے لے کر مُظفؔر رقص کرتا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ