نقشِ پا اُن ﷺ کا لا کلام تمام

نقشِ پا اُن ﷺ کا لا کلام تمام

اور سارے نقوش خام تمام

 

نور جن ﷺ کا ہے اَوّلیں تخلیق

کائنات ان ﷺ کا فیضِ عام، تمام

 

تھا تو پیغام ہر نبی علیہ السلام کا وہی

اُن ﷺ پہ ہونا تھا یہ نظام تمام

 

راہِ دیں پر ہر اک رسول چلا

مصطفیٰ ﷺ نے کیا خِرام تمام

 

آپ ﷺ نے در گزر کا درس دیا

عفو کی، رسمِ انتقام تمام

 

روشنی کے منار ہیں بیشک

اُن ﷺ کے اصحابؓ خاص و عام تمام

 

اُسوۂ مصطفیٰ ﷺ کو اپنا کر

ہو گئے فائز المرام تمام

 

پیرویٔ رسول ﷺ میں جو مٹے

ہیں رہِ عشق کے امام تمام

 

آرزو صرف ایک باقی ہے

اُن ﷺ کی دہلیز پر ہو کام تمام

 

نعت اُن ﷺ کی اُنہیں سناتے ہوئے

کاش ہو جائے یہ غلام تمام

 

آپ ﷺ کے فیض مکرمت سے ہوئی

نسلِ آدم ذوالاحترام تمام

 

پیروی جن ﷺ کی فرض ہے احسنؔ

اُن ﷺ کی مدحت پہ ہو کلام تمام

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

چمنِ طیبہ میں سنبل جو سنوارے گیسو
وہ سرور کشور رسالت جو عرش پر جلوہ گر ہوئے تھے
وہ نبیوں میں رحمت لقب پانے والا
دل میں اترتے حرف سے مجھ کو ملا پتا ترا
تیرا مجرم آج حاضر ہو گیا دربار میں
میں کبھی نثر کبھی نظم کی صورت لکھوں
نہ زہد و اتقا پر ہے نہ اعمالِ حسیں پر ہے
ہر درد کی دوا ہے صلَ علیٰ محمد
مرحبا سید مکی مدنی العربی
رسولِ پاک کی سیرت سے روشنی پا کر