اردوئے معلیٰ

Search

یہ دل پر فضلِ ربی کا اثر ہے

کہ محوِ مدحتِ خیر البشر ہے

 

کہے صلِّ علیٰ ہر ایک سن کر

محمد نام پیارا کس قدر ہے

 

وہ فخرِ انبیاء محبوبِ رب وہ

سرِ عرشِ بریں بھی جلوہ گر ہے

 

رفیع الذکر ہے وہ کملی والا

بہر سو تذکرہ آٹھوں پہر ہے

 

نہیں کچھ جز مصلیٰ اور بستر

اثاثُ البیت کتنا مختصر ہے

 

حنین و بدر ہو یا جنگِ خندق

بہ میدانِ وغا سینہ سپر ہے

 

طفیلِ مخبرِ مصدوق و صادق

ہمیں سب آج ہی کل کی خبر ہے

 

ہوئی تکمیلِ دیں اس کے ہی ہاتھوں

کہ رب کا آخری پیغامبر ہے

 

حضوری میں نبی کے ہیں ہمہ دم

فرشتوں کا مدینہ مستقر ہے

 

بذکرِ مصطفیٰ آنسو جو ٹپکا

مرے نزدیک خوش تر از گہر ہے

 

وہی میری نظرؔ میں میر و سلطاں

جو در کا آپ کے دریوزہ گر ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ