آج تقسیمِ عشق ہو ہی گئی ، اپنے اپنے حساب مانگ لئے

آج تقسیمِ عشق ہو ہی گئی ، اپنے اپنے حساب مانگ لئے

میں نے اپنی کتاب مانگی تو اس نے اپنے گلاب مانگ لئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

اس طرح ہنستے ہوئے خبریں پڑھیں لڑکی نے
یہ کس نے منظروں کو خاک کردیا کومل
اپنی مشکل کو یوں آسان کیا جاتا ہے
ہے روایت مرے قبیلے کی
مالک ترا کیا جاتا
ہونے ہیں شکستہ ابھی اعصاب ، لگی شرط
شجر کہاں تک بھلا ہواؤں کے کان بھرتے
گِرداب ، سفر کے لئے آزار ہوئے ہیں
ھر چیز مُشترک تھی ھماری سوائے نام
رستے میں مجھ کو مل گیا یونہی گرا پڑا