ابر شہر نبی سے آیا ہے

ابر شہر نبی سے آیا ہے

سارا ماحول مسکرایا ہے

 

جس کی ہر شاخ پر درود کھِلیں

پیڑ آنگن میں وہ لگایا ہے

 

دل نگر پر ہے آپ کا قبضہ

ہر نفس آپ کی رعایا ہے

 

ہر صفت میں خدائے یکتا نے

بے مثال آپ کو بنایا ہے

 

آمدِ مصطفیٰ ترے صدقے

رب نے کونین کو سجایا ہے

 

زندگی کرنے کا ہنر سب کو

میرے سرکار نے سکھایا ہے

 

اے صدف نعت مصطفےٰ کے طفیل

تاجِ توقیر تو نے پایا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ