اِک دل میں نہاں سیکڑوں غم رکھتا ہوں

اِک دل میں نہاں سیکڑوں غم رکھتا ہوں

شعلہ ہوں مگر آنکھوں کو نم رکھتا ہوں

دنیا مرے زخموں پہ چھڑکتی ہے نمک

مجبور ہوں کاغذ پہ قلم رکھتا ہوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ