اردوئے معلیٰ

اے نویدِ مسیحا دُعائے خلیل

نفرتوں کے گھنے جنگلوں میں شہا
عہد حاضر کا انسان محصور ہے
مشعلِ علم و اخلاق سے دُور ہے
کتنا مجبور ہے
اے نویدِ مسیحا
دُعائے خلیل
روک دے نفرتوں کی جو یلغار کو
پختگی ایسی دیں مرے کردار کو
آپ کا لطف و رحمت تو مشہور ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ