اردوئے معلیٰ

Search

بھرے ہیں گھاؤ مرے جب لیا ہے آپ کا نام

مرے نصیب کی گویا شفا ہے آپ کا نام

 

لکھا ہے قلب کی تختی پہ اس لئے میں نے

’’میں جانتا ہوں کہ سِرِ بقا ہے آپ کا نام‘‘

 

لیا جو نامِ محمد تو ہونٹ فورًا ہی

ملے ہیں شوق سے چوما گیا ہے آپ کا نام

 

گِھرا تھا میں جو بھنور میں تو میری آہ و فغاں

سنی خدا نے وسیلہ بنا ہے آپ کا نام

 

ہوا جو آپ کی بابت سوال تربت میں

کرم ہوا کہ زباں نے لیا ہے آپ کا نام

 

چلی جو بات شفاعت کی حشر میں آقا !

تو انبیا و رُسُل نے چُنا ہے آپ کا نام

 

درود آپ پہ پڑھتا ہے خود خدا چونکہ

اسے فنا نہیں یعنی بقا ہے آپ کا نام

 

مہک حرا کی سی رہتی ہے میری سانسوں میں

دلِ جلیل پہ جب سے سجا ہے آپ کا نام

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ