اردوئے معلیٰ

Search

تصور میں مدینے کی فضا ہے اور میں ہوں

مرا دل ہے سلامِ مجتبےٰ ہے اور میں ہوں

 

نگاہوں میں توقع سے زیادہ روشنی ہے

مرے آگے عقیدت کا دِیا ہے اور میں ہوں

 

پرندوں کی طرح مصرعے اترتے جا رہے ہیں

تخیل پر کرم کی انتہا ہے اور میں ہوں

 

طلب بیمار کی جز ذِکرِ احمد اور کیا ہو

مرے لب پر رکھی میری شفا ہے اور میں ہوں

 

مرا سایہ بھی تعظیماً رواں ہے سوئے طیبہ

درودوں سے مہکتا راستہ ہے اور میں ہوں

 

اگر تو اتباعِ قول ہے ہر گام تو پھر

متاعِ ہست میں صدق و صفا ہے اور میں ہوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ