اردوئے معلیٰ

Search

جب وہ سفر پر جایا کرتے

سر پر بادل سایہ کرتے

 

ان کا نام لبوں پر آئے

میٹھا میٹھا منہ ہوجائے

 

ان کے بول بہاروں جیسے

اور اصحاب ستاروں جیسے

 

ان سا پیارا اور نہ کوئی

ان سے بچھڑ کر لکڑی روئی

 

ان کی ذات اک شہر نرالا

علم اس شہر کا رہنے والا

 

کیسے لوگ تھے مکے والے

روح کے اندھے دل کے کالے

 

راس نہ آیا انہیں اجالا

چاند کو شہر بدر کر ڈالا

 

جس بنائے چاند ستارے

روشنیوں کے چشمے سارے

 

اس نے انہیں پسند کیا ہے

ان کا ذکر بلند کیا ہے

 

صادق اور امین وہی ہیں

طہَ اور یسین وہی ہیں

 

مولا کی پہچان وہی ہیں

سب سے بڑے انسان وہی ہیں

 

وہ مہمان عرش معلی

شان محمد اللہ اللہ

 

رحمت ان کی عالم عالم

صلی اللہ علیہ و سلم

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ